تعارف

نیشنل انشورنس کمپنی لمیٹڈ، پاکستان میں 31مارچ 2000 ، این آئی سی (ری آرگنائزیشن) آرڈیننس 2000 کے ذریعے کمپنیز آرڈیننس 1984 کے تحت غیر درج شدہ(unquoted)پبلک لمیٹڈ کمپنی کی حیثیت میں قائم کی گئی تھی۔ 
نیشنل انشورنس کمپنی لمیٹڈ کے اہم مقاصد ہیں:

  •  سرکاری/نیم سرکاری آرگنازیشنوں کو کفایتی نرخ پر انشورنس کے تحفظ کی فراہمی۔
  •  بیرون ملک ری انشورنس انحصار میں کمی لاکر غیر ملکی زرمبادلہ کو باہر جانے سے روکنا۔
  •  ٹیکسوں اور منافع منقسمہ کی ادائیگی کرکے قومی خزانے میں قابل ذکر حصہ ڈالنا۔
  •  زیادہ سے زیادہ آمدنی حاصل کرنے کی غرض سے پبلک کے ساتھ ساتھ پرائیویٹ سیکٹر میں دانائی کے ساتھ سرمایہ کاری کرنا۔

ملکیت

  • ابتداً میں اس کا نام نیشنل انشورنس کارپوریشن تھا جو NICایکٹ 1976 کے ذریعے 1976 میں قائم کی گئی تھی۔ 
  • نیشنل انشورنس کمپنی لمیٹڈ 100 فیصد حکومت پاکستان کی ملکیت میں چلنے والی کمپنی ہے جو وزارت تجارت کے انتظامی کنٹرول میں کام کررہی ہے۔ 
  • کمپنی کا منظور شدہ سرمایہ 6ارب روپے جبکہ ادا شدہ سرمایہ 2 ارب روپے ہے جو 10روپے فی شیئر کے 200 ملین شیئرز میں منقسم ہے۔ 
  • NBFI ہونے کی حیثیت سے سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (SECP)، NICL کا ریگولیٹر ہے۔

پرنسپل بزنس

نیشنل انشورنس کمپنی لمیٹڈ وفاقی، صوبائی ، لوکل اداروں اور آئینی کارپوریشنوں کی ملکیت میں موجود منقولہ اور غیر منقولہ ریاستی اثاثوں کی عمومی انشورنس کا تحفظ فراہم کررہی ہے۔ 

درج ذیل شعبوں میں انشورنس کا تحفظ فراہم کیا جارہے ہے:۔

  • آگ اور املاک کو نقصان ۔
  • ایوی ایشن ہل۔
  •  میرین ہل۔
  •  سمندری کارگو۔
  •  کریڈٹ رسک اور شیورٹی شپ۔
  •  موٹر۔
  •  قرضے۔
  •  ورکز کو زرتلافی ۔
  •  حادثات اور صحت۔
  •  انجینئرنگ/میکینکل موڈز۔
  •  زرعی قرضے(نئے)۔